صوفی سے

 

تری نگاہ ميں ہے معجزات کی دنيا
مری نگاہ ميں ہے حادثات کی دنيا
تخيلات کی دنيا غريب ہے، ليکن
غريب تر ہے حيات و ممات کی دنيا

عجب نہيں کہ بدل دے اسے نگاہ تری
بلا رہی ہے تجھے ممکنات کی دنيا