Menu

A+ A A-

آزاد کي رگ سخت ہے مانند رگ سنگ

 

آزاد کي رگ سخت ہے مانند رگ سنگ
محکوم کي رگ نرم ہے مانند رگ تاک
محکوم کا دل مردہ و افسردہ و نوميد
آزاد کا دل زندہ و پرسوز و طرب ناک
آزاد کي دولت دل روشن، نفس گرم
محکوم کا سرمايہ فقط ديدئہ نم ناک
محکوم ہے بيگانہء اخلاص و مروت
ہر چند کہ منطق کي دليلوں ميں ہے چالاک
ممکن نہيں محکوم ہو آزاد کا ہمدوش
وہ بندئہ افلاک ہے، يہ خواجہ افلاک

IIS Logo

Dervish Designs Online

IQBAL DEMYSTIFIED - Andriod and iOS 

          Image may contain: 2 people, text