Menu

Content

Breadcrumb

A+ A A-

عبد القادر کے نام

 

اٹھ کہ ظلمت ہوئی پيدا افق خاور پر
بزم ميں شعلہ نوائی سے اجالا کر ديں
ايک فرياد ہے مانند سپند اپنی بساط
اسی ہنگامے سے محفل تہ و بالا کر ديں
اہل محفل کو دکھا ديں اثر صيقل عشق
سنگ امروز کو آئينہ فردا کر ديں
جلوہ يوسف گم گشتہ دکھا کر ان کو
تپش آمادہ تر از خون زليخا کر ديں
اس چمن کو سبق آئين نمو کا دے کر
قطرہ شبنم بے مايہ کو دريا کر ديں
رخت جاں بت کدۂ چيں سے اٹھا ليں اپنا
سب کو محو رخ سعدی و سليمی کر ديں
ديکھ! يثرب ميں ہوا ناقہ ليلی بيکار
قيس کو آرزوئے نو سے شناسا کر ديں
بادہ ديرينہ ہو اور گرم ہو ايسا کہ گداز
جگر شيشہ و پيمانہ و مينا کر ديں
گرم رکھتا تھا ہميں سردی مغرب ميں جو داغ
چير کر سينہ اسے وقف تماشا کر ديں
شمع کی طرح جييں بزم گہ عالم ميں
خود جليں ، ديدہ اغيار کو بينا کر ديں
''ہر چہ در دل گذرد وقف زباں دارد شمع
سوختن نيست خيالے کہ نہاں دارد شمع

 

------------------

 

Transliteration

 

Abdul Qadir Ke Naam

Uth Ke Zulmat Huwi Paida Ufaq-e-Khawar Par
Bazm Mein Shoala Nawayi Se Ujala Kar Dain


Aik Faryad Hai Manind-e-Sipand Apni Bisat
Issi Hangame Se Mehfil Tah-o-Bala Kar Dain

 

Ahl-e-Mehfil Ko Dikha Dain Asr-e-Saqeel-e-Ishq
Sang-e-Amroz Ko Aeena-e-Farda Kar Dain


Jalwa-e-Yousaf-e-Gum Gashta Dikha Kar In Ko
Tapish Aamadah Tar Az Khoon-e-Zulekha Kar Dain


Iss Chaman Ko Sabaq Aaeene-e-Namoo Ka Dar Kar
Qatra-e-Shabnam-e-Be-Maya Ko Darya Kar Dain


Rakht-e-Jaan Butkuda-e-Cheen De Utha Lain Apna
Sub Ko Mehv-e-Rukh-e-Saadi-o-Sulema Kar Dain


Dekh! Yasrab Mein Huwa Naqa-e-Laila Baikar
Qias Ko Arzoo-e-Nau Se Shanasa Kar Dain


Badah Dairina  Ho Aur Garam Ho Aesa Ke Gudaz
Jigar-e-Shisha-o-Pemana-o-Meena Kar Dain


Garam Rakhta Tha Humain Sardi-e-Maghrib Mein Jo Dagh
Cheer Kar Seena Usse Waqf-e-Tamasha Kar Dain


Shama Ki Tarah Jabeen Bazm Gah-e-Alam Mein
Khud Jalain, Didah-e-Aghyar Ko Beena Kar Dain


“Har Che Dil Guzrd Wa Qaf-e-Zuban Darad Shama
Sokhtan Neest Khaya Le Ke Nihan Darad Shama”

IIS Logo

www.DervishOnline.com

 

 

IQBAL DEMYSTIFIED - ANDROID APP