Menu

Content

Breadcrumb

A+ A A-

پيام عشق

 

سن اے طلب گار درد پہلو! ميں ناز ہوں ، تو نياز ہو جا
ميں غزنوی سومنات دل کا ، تو سراپا اياز ہو جا
نہيں ہے وابستہ زير گردوں کمال شان سکندری سے
تمام ساماں ہے تيرے سينے ميں ، تو بھی آئينہ ساز ہو جا
غرض ہے پيکار زندگی سے کمال پائے ہلال تيرا
جہاں کا فرض قديم ہے تو ، ادا مثال نماز ہو جا
نہ ہو قناعت شعار گلچيں! اسی سے قائم ہے شان تيری
وفور گل ہے اگر چمن ميں تو اور دامن دراز ہو جا
گئے وہ ايام ، اب زمانہ نہيں ہے صحرانورديوں کا
جہاں ميں مانند شمع سوزاں ميان محفل گداز ہو جا
وجود افراد کا مجازی ہے ، ہستی قوم ہے حقيقی
فدا ہو ملت پہ يعنی آتش زن طلسم مجاز ہو جا
يہ ہند کے فرقہ ساز اقبال آزری کر رہے ہيں گويا
بچا کے دامن بتوں سے اپنا غبار راہ حجاز ہو جا

 

---------------

 

Transliteration

 

Payam-e-Ishq
````

Sun Ae Talabgaar-e-Dard-e-Pehlu! Main Naaz Hun, Tu Niaz Ho Ja
Main Ghaznavi Soumanat-e-Dil Ka Hum Tu Sarapa Ayaz Ho Ja

 

Nahin Hai Wabasta Zair-e-Gurdoon Kamal Shan-e-Sikandari Se
Tamam Saman Hai Tere Seene Mein, Tu Bhi Aaeena Saaz Ho Ja


Garz Hai Paikar-e-Zindagi Se Kamal Paye Hilal Tera 
Jahan Ka Farz-e-Qadeem Hai Tu, Ada Misal-e-Namaz Ho Ja


Na Ho Qinaat Shuar Gulcheen! Issi  Se Qayam Hai Shan Teri
Wafoor-e-Gul Hai Agar Chaman Mein To Aur Daman Daraz Ho Ja


Gye Woh Ayyam, Ab Zamana Nahin Hai Sehra Nawardiyon Ka
Jahan Mein Manind-e-Shama Souzan Miyan-e-Mehfil Gudaz Ho Ja


Wujood Afrad Ka Majazi Hai, Hasti-e-Qoum Hai Haqeeqi
Fida Ho Millat Pe Yani Atish Zan-e-Tilism-e-Majaaz Ho Ja


Ye Hind Ke Firqa Saaz Iqbal Azari Kar Rahe Hain Goya
Bacha Ke Daman Buton Se Apna Gubar-e-Rah-e-Hijaz Ho Ja

IIS Logo

www.DervishOnline.com

 

 

IQBAL DEMYSTIFIED - ANDROID APP