Menu

Content

Breadcrumb

A+ A A-

عقل و دل

 


عقل نے ايک دن يہ دل سے کہا
بھولے بھٹکے کی رہنما ہوں ميں
ہوں زميں پر ، گزر فلک پہ مرا
ديکھ تو کس قدر رسا ہوں ميں
کام دنيا ميں رہبری ہے مرا
مثل خضر خجستہ پا ہوں ميں
ہوں مفسر کتاب ہستی کی
مظہر شان کبريا ہوں ميں
بوند اک خون کی ہے تو ليکن
غيرت لعل بے بہا ہوں ميں
دل نے سن کر کہا يہ سب سچ ہے
پر مجھے بھی تو ديکھ ، کيا ہوں ميں
راز ہستی کو تو سمجھتی ہے
اور آنکھوں سے ديکھتا ہوں ميں
ہے تجھے واسطہ مظاہر سے
اور باطن سے آشنا ہوں ميں
علم تجھ سے تو معرفت مجھ سے
تو خدا جو ، خدا نما ہوں ميں
علم کي انتہا ہے بے تابی
اس مرض کی مگر دوا ہوں ميں
شمع تو محفل صداقت کی
حسن کی بزم کا ديا ہوں ميں
تو زمان و مکاں سے رشتہ بپا
طائر سدرہ آشنا ہوں ميں

کس بلندی پہ ہے مقام مرا
عرش رب جليل کا ہوں ميں

--------------

Transliteration

Aqal-o-Dil

 

 

 

Aqal Ne Aik Din Ye Dil Se Kaha

Bhoole Bhatke Ki Rahnuma Hun Main

 

 

 

Hun Zameen Par, Guzr Falak Pe Mera

Dekh To Kis Qadar Rasa Hun Main

 

 

 

Kaam Dunya Mein Rahbari Hai Mera

Misl-e-Khizr-e-Khajasta Pa Hun Main

 

 

 

Hun Mufassir-e-Kitab-e-Hasti Ki

Mazhar-e-Shan-e-Kibriya Hun Main

 

 

 

Boond Ek Khoon Ki Hai Tu Lekin

Ghairat-e-Laal-e-Be Baha Hun Main

 

 

 

Dil Ne Sun Kar Kaha Ye Sub Sach Hai

Par Mujhe Bhi To Dekh, Kya Hun Main

 

 

 

 

Raaz-e-Hasti Ko Ti Samajhti Hai

Aur Ankhon Se Dekhta Hun Main!

 

 

 

 

Hai Tujhe Wasta Mazahir Se

Aur Batin Se Ashna Hun Main

 

 

 

 

Ilm Tujh Se To Maarifat Mujh Se

Tu Khuda Joo, Khuda Numa Hun Main

 

 

 

Ilm Ki Intiha Hai Betaabi

Iss Marz Ki Magar Dawa Hun Main

 

 

 

 

Shama Tu Mehfil-e-Sadaqat Ki

Husn Ki Bazm Ka Diya Hun Main

 

 

 

 

Tu Zaman-o-Makan Se Rishta Bapa

Taeer-e-Sidra Se Ashna Hun Main

 

 

 

 

Kis Bulandi Pe Hai Maqam Mera

 

Arsh Rab-e-Jaleel Ka Hun Main!

IIS Logo

www.DervishOnline.com

 

 

IQBAL DEMYSTIFIED - ANDROID APP