Menu

Content

Breadcrumb

A+ A A-

ماں کا خواب

 

ماخو ذ

بچوں کے لئے

 

ميں سوئی جو اک شب تو ديکھا يہ خواب

بڑھا اور جس سے مرا اضطراب

يہ ديکھا کہ ميں جا رہی ہوں کہيں

اندھيرا ہے اور راہ ملتی نہيں

لرزتا تھا ڈر سے مرا بال بال

قدم کا تھا دہشت سے اٹھنا محال

جو کچھ حوصلہ پا کے آگے بڑھی

تو ديکھا قطار ايک لڑکوں کی تھی

زمرد  سی  پوشاک پہنے ہوئے

ديئے سب کے ہاتھوں ميں جلتے ہوئے

وہ چپ چاپ تھے آگے پيچھے رواں

خدا جانے جانا تھا ان کو کہاں

اسی سوچ ميں تھی کہ ميرا پسر

مجھے اس جماعت ميں آيا نظر

وہ پيچھے تھا اور تيز چلتا نہ تھا

ديا اس کے ہاتھوں ميں جلتا نہ تھا

کہا ميں نے پہچان کر ، ميری جاں

مجھے چھوڑ کر آ گئے تم کہاں

جدائی ميں رہتی ہوں ميں بے قرار

پروتی ہوں ہر روز اشکوں کے ہار

نہ پروا ہماری ذرا تم نے کی

گئے چھوڑ ، اچھی وفا تم نے کی

جو بچے نے ديکھا مرا پيچ و تاب

ديا اس نے منہ پھير کر يوں جواب

رلاتي ہے تجھ کو جدائی مری

نہيں اس ميں کچھ بھی بھلائی مری

يہ کہہ کر وہ کچھ دير تک چپ رہا

ديا پھر دکھا کر يہ کہنے لگا

سمجھتی ہے تو ہو گيا کيا اسے؟

ترے آنسوئوں نے بجھايا اسے

..............

مشکل الفاظ کے معنی

شب: رات، اضطراب: بے چینی، پریشانی، رزنا: کانپنا،  محال: بہت مشکل، زمرد: سبز رنگ کا ہیرا، مراد سبز رنگ، پسر: بیٹا، اشکوں: اشک کی جمع، آنسو، پیچ و تاب: گھبراہٹ، پریشانی

..............

 

TRANSLITERATION


Maan Ka Khawab
(Makhooz - Bachon Ke Liye)



Mein Soyi Jo Ek Shab To Dekha Ye Khawab
Barha Aur Jis Se Mera Iztarab


Ye Dekha Ke Mein Ja Rahi Hun Kahin
Andhera Hai Aur Rah Milti Nahin

Larazta Tha Der Se Mera Baal Baal
Qadam Ka Tha Dehshat Se Uthna Mahal

Trembling all over with fear I was
Difficult to take even a step with fear was

Jo Kuch Hosla Pa Ke Aagay Berhi
To Dekha Qitar Aik Larkon Ki Thi



Zumurad Si Poshak Pehne Huay
Diye Sub Ke Hathon Mein Jalte Huay


Woh Chup Chap Thay Agay Peche Rawan
Khuda Jane Jana Tha Un Ko Kahan



Iss Soch Mein Thi Ke Mera Pisar
Mujhe Uss Jamat Mein Aya Nazar


Woh Peche Tha Aur Taez Chalta Na Tha
Diya Uss Ke Hathon Mein Jalta Na Tha


Kaha Mein Ne Pehchan Ker, Meri Jaan!
Mujhe Chor Ker Aa Gye Tum Kahan?


Judai Mein Rehti Hun Main Be-Qarar
Paroti Hun Her Rouz Ashkon Ke Haar



Na Perwa Humari Zara Tum Ne Ki
Gye Chor, Achi Wafa Tum Ne Ki!



Jo Bache Ne Dekha Mera Peach O Taab
Diya Uss Ne Munh Phair Ker Yun Jawab



Rulati Hai Tujh Ko Juddai Meri
Nahin Uss Mein Kuch Bhi Bhalai Meri



Ye Keh Ker Vo Kuch Dair Tak Chup Raha
Diya Phir Dikha Ker Ye Kehne Laga

Samajhti Hai Tu Ho Gaya Kya Issay?
Tere Aanasuon Ne Bhujaya Issay!

IIS Logo

www.DervishOnline.com

 

 

IQBAL DEMYSTIFIED - ANDROID APP