Menu

Content

Breadcrumb

A+ A A-

شاہيں

 

کيا ميں نے اس خاک داں سے کنارا
جہاں رزق کا نام ہے آب و دانہ
بياباں کي خلوت خوش آتي ہے مجھ کو
ازل سے ہے فطرت مري راہبانہ
نہ باد بہاري ، نہ گلچيں ، نہ بلبل
نہ بيماري نغمہ عاشقانہ
خيابانيوں سے ہے پرہيز لازم
ادائيں ہيں ان کي بہت دلبرانہ
ہوائے بياباں سے ہوتي ہے کاري
جواں مرد کي ضربت غازيانہ
حمام و کبوتر کا بھوکا نہيں ميں
کہ ہے زندگي باز کي زاہدانہ
جھپٹنا ، پلٹنا ، پلٹ کر جھپٹنا
لہو گرم رکھنے کا ہے اک بہانہ
يہ پورب ، يہ پچھم چکوروں کي دنيا
مرا نيلگوں آسماں بيکرانہ

پرندوں کي دنيا کا درويش ہوں ميں
کہ شاہيں بناتا نہيں آشيانہ

--------------------------


Translitration

Kiya Mein Ne Uss Khakdan Se Kinara
Jahan Rizq Kanaam Hai Aab-o-Dana

Bayaban Ki Khalwat Khush Ati Hai Mujh Ko
Azal Se Hai Fitrat Meri Rahbana

Na Bad-e-Bahari, Na Gulcheen, Na Bulbul
Na Beemari-e-Naghma-e-Ashiqana

Khayabanion Se Hai Parhaiz Lazim
Adaen Hain In Ki Bohat Dilbarana

Hawa-e-Bayaban Se Hoti Hai Kari
Jawan Mard Ki Zarbat-e-Ghaziyana

Hamam-o-Kabootar Ka Bhooka Nahin Main
Ke Hai Zindagi Baaz Ki Zahidana

Jhapatna, Palatna, Palat Kar Jhapatna
Lahoo Garam Rakhne Ka Hai Ek Bahana

Ye Poorab, Ye Pacham Chakoron Ki Dunya
Mera Neelgun Asman Baikarana

Prindon Ki Dunya Ka Dervaish Hun Mein
Ke Shaheen Banata Nahin Ashiyana

--------------------------

IIS Logo

www.DervishOnline.com

 

 

IQBAL DEMYSTIFIED - ANDROID APP