Menu

Content

Breadcrumb

A+ A A-

خوشحال خاں کي وصيت

 

قبائل ہوں ملت کي وحدت ميں گم
کہ ہو نام افغانيوں کا بلند
محبت مجھے ان جوانوں سے ہے
ستاروں پہ جو ڈالتے ہيں کمند
مغل سے کسي طرح کمتر نہيں
قہستاں کا يہ بچہء ارجمند
کہوں تجھ سے اے ہم نشيں دل کي بات
وہ مدفن ہے خوشحال خاں کو پسند
اڑا کر نہ لائے جہاں باد کوہ
مغل شہسواروں کي گرد سمند
---------------------------


Translitration

Qabail Hon Millat Ki Wahdat Mein Gum
Ke Ho Naam Afghaniyon Ka Buland

Mohhabbat Mujhe Un Jawanon Se Hai
Sitaron Pe Jo Dalte Hain Kum

Mughal Se Kisi Tarah Kamtar Nahin
Kehistan Ka Ye Bacha-e-Arjumand

Kahun Tujh Se Ae Hum Nasheen Dil Ki Baat
Who Madfan Hai Khushhal Khan Ko Pasand

Ura Kar Na Laye Jahan Bad-e-Koh
Mughal Shahsawaron Ki Gard-e-Samand!

--------------------------

ء کو مغلوں خوشحال خاں خٹک پشتوزبان کا مشہور وطن دوست شاعر تھا جس نے
ميں سو کي -قبائل ميں سے آزادکرانے کے ليے سرحد کے افغاني قبائل کي ايک
انگريزي نظموں کا صرف آفريديوں نے آخردم تک اس کا ساتھ ديا- اس کي
ترجمہجمعيت قائم1862لندن ميں شائع ہوا تھاقريبا ً ايک افغانستان

IIS Logo

www.DervishOnline.com

 

 

IQBAL DEMYSTIFIED - ANDROID APP