Menu

Content

Breadcrumb

A+ A A-

قيد خانے ميں معتمدکی فرياد

 

معتمد اشبيليہ کا بادشاہ اور عربی شاعر تھا -ہسپانيہ کے ايک
معتمد حکمران نے اس کو شکست دے کر قيد ميں ڈال ديا تھا
ايسٹ کی نظميں انگريزی ميں ترجمہ ہوکر '' وزڈم آف دی -
سيريز'' ميں شائع ہو چکی ہيں


اک فغان بے شرر سينے ميں باقی رہ گئی
سوز بھی رخصت ہوا ، جاتی رہی تاثير بھی
مرد حر زنداں ميں ہے بے نيزہ و شمشير آج
ميں پشيماں ہوں ، پشيماں ہے مری تدبير بھی
خود بخود زنجير کی جانب کھنچا جاتا ہے دل
تھی اسی فولاد سے شايد مری شمشير بھی
جو مری تيغ دو دم تھی ، اب مری زنجير ہے
شوخ و بے پروا ہے کتنا خالق تقدير بھی

-------------------------

Translitration

Ek Faghan-e-Be Sharar Seene Mein Baqi Reh Gyi
Souz Bhi Rukhsat Huwa, Jati Rahi Taseer Bhi

Mard-e-Hur Zindan Mein Hai Be-Naiza-o-Shamsheer Aaj
Main Pasheman Hun, Pasheman Hai Meri Tadbeer Bhi

Khud-Ba-Khud Zanjeer Ki Janib Khincha Jata Hai Dil
Thi Issi Foulad Se Shaid Meri Shamsheer Bhi

Jo Meri Taeg-e-Dodam Thi, Ab Meri Shamsheer Hai
Shoukh-o-Be Parwa Hai Kitna Khaliq-e-Taqdeer Bhi !

--------------------------

IIS Logo

www.DervishOnline.com

 

 

IQBAL DEMYSTIFIED - ANDROID APP