Menu

Content

Breadcrumb

A+ A A-

يہ پيران کليسا و حرم ، اے وائے مجبوری


يہ پيران کليسا و حرم ، اے وائے مجبوری
صلہ ان کی کدوی کاوش کا ہے سينوں کی بے نوری
يقيں پيدا کر اے ناداں! يقيں سے ہاتھ آتی ہے
وہ درويشی ، کہ جس کے سامنے جھکتی ہے فغفوری
کبھی حيرت ، کبھی مستی ، کبھی آہ سحرگاہی
بدلتا ہے ہزاروں رنگ ميرا درد مہجوری
حد ادراک سے باہر ہيں باتيں عشق و مستی کی
سمجھ ميں اس قدر آيا کہ دل کی موت ہے ، دوری
وہ اپنے حسن کی مستی سے ہيں مجبور پيدائی
مری آنکھوں کی بينائی ميں ہيں اسباب مستوری
کوئی تقدير کی منطق سمجھ سکتا نہيں ورنہ
نہ تھے ترکان عثمانی سے کم ترکان تيموری
فقيران حرم کے ہاتھ اقبال آگيا کيونکر
ميسر ميرو سلطاں کو نہيں شاہين کافوری

------------------------

Translitration

Ye Peeran-e-Kalisa-o-Haram, Ae Waye Majboori!
Sila In Ki Kid-o-Kawish Ka Hai Seenon Ki Benoori

Yaqeen Paida Kar Ae Nadan! Yaqeen Se Hath Ati Hai
Woh Darvaishi Ke Jis Ke Samne Jhukti Hai Fagfoori

Kabhi Hairat, Kabhi Masti, Kabhi Aah-e-Sahargahi
Badalta Hai Hazaron Rang Mera Dard-e-Mehjoori

Had-e-Adraak Se Bahir Hain Batain Ishq-o-Masti Ki
Samajh Mein Iss Qadar Aya Ke Dil Ki Mout Hai Doori

Woh Apne Husn Ki Masti Se Majboor-e-Paidai
Meri Ankhon Ki Bainai Mein Hain Asbaab-e-Mastoori

Koi Taqdeer Ki Mantaq Samajh Sakta Nahin Warna
Na The Turkaan-e-Usmani Se Kam Turkaan-e-Taimoori

Faqeeran-e-Haram Ke Hath Iqbal Aa Gya Kyunkar
Maiyasar Mir-e-Sultan Ko Nahin Shaheen-e-Kafoori

--------------------------------------

 

IIS Logo

www.DervishOnline.com

 

 

IQBAL DEMYSTIFIED - ANDROID APP