Menu

Content

Breadcrumb

A+ A A-

زمستانی ہوا ميں گرچہ تھی شمشير کی تيزی


زمستانی ہوا ميں گرچہ تھی شمشير کی تيزی
نہ چھوٹے مجھ سے لندن ميں بھی آداب سحر خيزی
کہيں سرمايہ محفل تھی ميری گرم گفتاری
کہيں سب کو پريشاں کر گئی ميری کم آميزی
زمام کار اگر مزدور کے ہاتھوں ميں ہو پھر کيا!
طريق کوہکن ميں بھی وہی حيلے ہيں پرويزی
جلال پادشاہی ہو کہ جمہوری تماشا ہو
جدا ہو ديں سياست سے تو رہ جاتی ہے چنگيزی
سواد رومة الکبرے ميں دلی ياد آتی ہے
وہی عبرت ، وہی عظمت ، وہی شان دل آويزی

----------------------------

Translitration

Zmastani Hawa Mein Garcha Thi Shamsheer Ki Taizi
Na Chhoote Mujh Se London Mein Bhi Adab-E-Sehar Khaizi

Kahin Sarmaya’ay Mehfil Thi Meri Garam Guftari
Kahin Sub Ko Preshan Kar Gyi Meri Kam Amaizi

Zamam-E-Kaar Agar Mazdoor Ke Hathon Mein Ho Phir Kya!
Tareeq-E-Kohkan Mein Bhi Wohi Heelay Hain Parvaizi

Jalal-E-Padshahi Ho K Jamhoori Tamasha Ho
Juda Ho Deen Siasat Se To Reh Jati Hai Changaizi

Sawad-E-Ruma-Tul-Kubra Mein Dilli Yaad Ati Hai
Wohi Ibrat, Wohi Azmat, Wohi Shaan-E-Dil-Awaizi

-------------------------

IIS Logo

www.DervishOnline.com

 

 

IQBAL DEMYSTIFIED - ANDROID APP