Menu

Content

Breadcrumb

A+ A A-

خودی کی شوخی و تندی ميں کبر و ناز نہيں


خودی کی شوخی و تندی ميں کبر و ناز نہيں
جو ناز ہو بھی تو بے لذت نياز نہيں
نگاہ عشق دل زندہ کی تلاش ميں ہے
شکار مردہ سزاوار شاہباز نہيں
مری نوا ميں نہيں ہے ادائے محبوبی
کہ بانگ صور سرافيل دل نواز نہيں
سوال مے نہ کروں ساقی فرنگ سے ميں
کہ يہ طريقہ رندان پاک باز نہيں
ہوئی نہ عام جہاں ميں کبھی حکومت عشق
سبب يہ ہے کہ محبت زمانہ ساز نہيں
اک اضطراب مسلسل ، غياب ہو کہ حضور
ميں خود کہوں تو مری داستاں دراز نہيں
اگر ہو ذوق تو خلوت ميں پڑھ زبور عجم
فغان نيم شبی بے نوائے راز نہيں

-------------------------

Translitration

Khudi Ki Shokhi-O-Tundi Mein Kubr-O-Naaz Nahin
Jo Naaz Ho Bhi To Be-Lazzat-E-Niaz Nahin

Nigah-E-Ishq Dil-E-Zindah Ki Talash Mein Hai
Shikar-E-Murda Sazawar-E-Shahbaz Nahin

Meri Nawa Main Nahin Hai Ada’ay Mehboobi
K Bang-E-Soor-E-Sarafeel Dil Nawaz Nahin

Sawal-E-Mai Na Karoon Saqi-E-Farang Se Main
Ke Ye Tareeqa-E-Rindan-E-Pakbaz Nahin

Huwi Na Aam Jahan Mein Kabhi Hukumat-E-Ishq
Sabab Ye Hai K Mohabbat Zamana Saaz Nahin

Ek Iztarab-E-Musalsal, Ghayaab Ho Ke Huzoor
Main Khud Kahoon To Meri Dastan Daraz Nahin

Agar Ho Zauq To Khalwat Mein Perh Zuboor-E-Ajam
Faghan-E-Neem Shabi Be-Nawa’ay Raaz Nahin

-------------------------

IIS Logo

www.DervishOnline.com

 

 

IQBAL DEMYSTIFIED - ANDROID APP