Menu

Content

Breadcrumb

A+ A A-

يہ حوريان فرنگی ، دل و نظر کا حجاب


يہ حوريان فرنگی ، دل و نظر کا حجاب
بہشت مغربياں ، جلوہ ہائے پا بہ رکاب
دل و نظر کا سفينہ سنبھال کر لے جا
مہ و ستارہ ہيں بحر وجود ميں گرداب
جہان صوت و صدا ميں سما نہيں سکتی
لطيفہ ازلی ہے فغان چنگ و رباب
سکھا ديے ہيں اسے شيوہ ہائے خانقہی
فقيہ شہر کو صوفی نے کر ديا ہے خراب
وہ سجدہ ، روح زميں جس سے کانپ جاتی تھی
اسی کو آج ترستے ہيں منبر و محراب
سنی نہ مصر و فلسطيں ميں وہ اذاں ميں نے
ديا تھا جس نے پہاڑوں کو رعشہ سيماب
ہوائے قرطبہ! شايد يہ ہے اثر تيرا
مری نوا ميں ہے سوز و سرور عہد شباب

-----------------------

Translitration

Ye Hooriyan-E-Farangi, Dil-O-Nazar Ka Hijab
Bahisht-E-Magrabiyan, Jalwa Ha’ay Pa Ba-Rakab

Dil-O-Nazar Ka Safina Sanbhal Kar Le Ja
Mah-O-Sitara Hain Behar-E-Wujood Mein Gardab

Jahan-E-Soot-O-Sada Mein Sama Nahin Sakti
Latifa’ay Azali Hai Afghan-E-Ching-O-Rubab

Sikha Diye Hain Isse Shewa Haye Khanqahi
Faqeeh-E-Sheher Ko Sufi Ne Kar Diya Kharab

Woh Sajda, Rooh-E-Zameen Jis Se Kanp Jati Thi
Ussi Ko Aj Taraste Hain Minber-O-Mehrab

Suni Na Misar-O-Falasteen Mein Woh Azaan Main Ne
Diya Tha Jis Ne Paharon Ko Raisha’ay Simab

Hawa-E-Qurtuba ! Shaid Ye Hai Asar Tera
Meri Nawa Mein Hai, Souz-Surroor-E-Ehad-E-Shabab

-------------------------

IIS Logo

www.DervishOnline.com

 

 

IQBAL DEMYSTIFIED - ANDROID APP