Menu

Content

Breadcrumb

A+ A A-

يہ کون غزل خواں ہے پرسوز و نشاط انگيز


يہ کون غزل خواں ہے پرسوز و نشاط انگيز
انديشہ دانا کو کرتا ہے جنوں آميز
گو فقر بھی رکھتا ہے انداز ملوکانہ
نا پختہ ہے پرويزی بے سلطنت پرويز
اب حجرہ صوفی ميں وہ فقر نہيں باقی
خون دل شيراں ہو جس فقر کی دستاويز
اے حلقہ درويشاں ! وہ مرد خدا کيسا
ہو جس کے گريباں ميں ہنگامہ رستا خيز
جو ذکر کی گرمی سے شعلے کی طرح روشن
جو فکر کی سرعت ميں بجلی سے زيادہ تيز
کرتی ہے ملوکيت آثار جنوں پيدا
اللہ کے نشتر ہيں تيمور ہو يا چنگيز
يوں داد سخن مجھ کو ديتے ہيں عراق و پارس
يہ کافر ہندی ہے بے تيغ و سناں خوں ريز

---------------------

Translitration

Ye Kon Ghazal Khawan Hai, Pursouz-o-Nishat Angaiz
Andesha’ay Dana Ko Karta Hai Junoon Amaiz


Gau Faqr Bhi Rakhta Hai Andaz-e-Mulookana
Na-Pukhta Hai Pervaizi Be-Saltanat-e-Pervaiz


Ab Hujra’ay Sufi Mein Woh Faqr Nahin Baqi
Khoon-e-Dil-e-Shairan Ho Jis Faqr Ki Dastavaiz


Ae Halqa’ay Darveshan! Who Mard-e-Khuda Kaisa
Ho Jis Ke Gireeban Mein Hangama’ay Rastakhaiz


Jo Zakr Ki Garmi Se Shaule Ki Tarah Roshan
Jo Fikar Ki Sura’at Mein Bajli Se Zaida Taez !


Karti Hai Mulookiat Asaar-e-Junoon Paida
Allah Ke Nashtar Hain Taimoor Ho Ya Changaiz


Yun Dad-e-Sukhan Mujh Ko Dete Hain Iraq-o-Paras
Ye Kafir-e-Hindi Hai Be Taeg-o-Sanaan Khoonraiz

--------------------------------

IIS Logo

www.DervishOnline.com

 

 

IQBAL DEMYSTIFIED - ANDROID APP