Menu

Content

Breadcrumb

A+ A A-

اثر کرے نہ کرے ، سن تو لے مری فرياد


اثر کرے نہ کرے ، سن تو لے مری فرياد
نہيں ہے داد کا طالب يہ بندۂ آزاد
يہ مشت خاک ، يہ صرصر ، يہ وسعت افلاک
کرم ہے يا کہ ستم تيری لذت ايجاد
ٹھہر سکا نہ ہوائے چمن ميں خيمۂ گل
يہی ہے فصل بہاری ، يہی ہے باد مراد؟
قصور وار ، غريب الديار ہوں ليکن
ترا خرابہ فرشتے نہ کر سکے آباد
مری جفا طلبی کو دعائيں ديتا ہے
وہ دشت سادہ ، وہ تيرا جہان بے بنياد
خطر پسند طبيعت کو ساز گار نہيں
وہ گلستاں کہ جہاں گھات ميں نہ ہو صياد
مقام شوق ترے قدسيوں کے بس کا نہيں

انھی کا کام ہے يہ جن کے حوصلے ہيں زياد

--------------------------------------
Translitration
Asar Kare Na Kare, Sun To Le Meri Faryad
Nahin Hai Dad Ka Talib Ye Banda’ay Azad

Ye Musht-e-Khaak, Ye Sar Sar, Ye Wusaat-e-Aflak
Karam Hai Ya Ke Sitam Teri Lazzat-e-Ijad

Thehar Saka Na Huwa’ay Chaman Mein Khaima’ay Gul
Ye Hai Fasal-e-Bahari, Ye Hai Baad-e-Murad

Kasoorwar, Ghareeb-ud-Diyar Hun, Lekin
Tera Kharaba Farishte Na Kar Sake Abad

Meri Jafa Talbi Ko Duaen Deta Hai
Woh Dasht-e-Sada, Woh Tera Jahan-e-Bebunyad

Khatar Pasand Tabiyat Ko Saazgaar Nahin
Woh Gulistan Ke Jahan Ghaat Mein Na Ho Sayyad


Maqam-e-Shauq Tere Qudsiyon Ke Bus Ka Nahin
Unhi Ka Kaam Hai Ye Jin Ke Hosle Hain Zayyad

-----------------------------------------

 

IIS Logo

www.DervishOnline.com

 

 

IQBAL DEMYSTIFIED - ANDROID APP