Menu

Content

Breadcrumb

A+ A A-

عالم برزخ

 

 

 

 

مردہ اپني قبر سے

کيا شے ہے، کس امروز کا فردا ہے قيامت
اے ميرے شبستاں کہن! کيا ہے قيامت؟


قبر

اے مردئہ صد سالہ! تجھے کيا نہيں معلوم؟
ہر موت کا پوشيدہ تقاضا ہے قيامت!


مردہ

جس موت کا پوشيدہ تقاضا ہے قيامت
اس موت کے پھندے ميں گرفتار نہيں ميں
ہر چند کہ ہوں مردئہ صد سالہ وليکن
ظلمت کدہ خاک سے بيزار نہيں ميں
ہو روح پھر اک بار سوار بدن زار
ايسي ہے قيامت تو خريدار نہيں ميں


صدائے غيب

نے نصيب مار و کژدم، نے نصيب دام و دد
ہے فقط محکوم قوموں کے ليے مرگ ابد
بانگ اسرافيل ان کو زندہ کر سکتي نہيں
روح سے تھا زندگي ميں بھي تہي جن کا جسد
مر کے جي اٹھنا فقط آزاد مردوں کا ہے کام
گرچہ ہر ذي روح کي منزل ہے آغوش لحد


قبر
(اپنے مردہ سے )

آہ ، ظالم! تو جہاں ميں بندہ محکوم تھا
ناکميں نہ سمجھي تھي کہ ہے کيوں خاک ميري سوز

تيري ميت سے مري تاريکياں تاريک تر
تيري ميت سے زميں کا پردئہ ناموس چاک
الحذر، محکوم کي ميت سے سو بار الحذر
اے سرافيل! اے خدائے کائنات! اے جان پاک!


صدائے غيب

گرچہ برہم ہے قيامت سے نظام ہست و بود
ہيں اسي آشوب سے بے پردہ اسرار وجود
زلزلے سے کوہ و در اڑتے ہيں مانند سحاب
زلزلے سے واديوں ميں تازہ چشموں کي نمود
ہر نئي تعمير کو لازم ہے تخريب تمام
ہے اسي ميں مشکلات زندگاني کي کشود


زمين

آہ يہ مرگ دوام، آہ يہ رزم حيات
ختم بھي ہوگي کبھي کشمکش کائنات!
عقل کو ملتي نہيں اپنے بتوں سے نجات
عارف و عامي تمام بندئہ لات و منات
خوار ہوا کس قدر آدم يزداں صفات
قلب و نظر پر گراں ايسے جہاں کا ثبات
کيوں نہيں ہوتي سحر حضرت انساں کي رات؟

------------

Transliteration

 

Alam-e-Barzakh

 

Murda Apni Qabar Se

 Kya Shay Hai, Kis Amroz Ka Farda Hai Qayamat

 Ae Mere Shabistan-E-Kuhan ! Kya Hai Qayamat? 

 Qabar

 Ae Murda’ay Sad Sala ! Tujhe Kya Nahin Maloom?

 Har Mout Ka Poshida Taqaza Hai Qayamat !

 Murda 

 Jis Mout Ka Poshida Taqaza Hai Qayamat

 Uss Mout Ke Phande Mein Giraftar Nahin Main

 

Har Chand Ke Hun Murda’ay Sad Sala Walekin

 Zulmat Kudda’ay Khak Se Bezaar Nahin Main

 

 Ho Rooh Phir Ek Bar Sawar-e-Badan-e-Zaar

 Aesi Hai Qayamat To Kharidar Nahin Main

  Sada’ay Ghaib

 Ne Naseeb-e-Maar Wa Kuzdum, Ne Naseeb-e-Dawam Wa Dad

 Hai Faqat Mehkoom Qoumon Ke Liye Marg-e-Abad

 

 Bang-e-Israfeel Un Ko Zinda Kar Sakti Nahin

 Rooh Se Tha Zindagi Mein Bhi Tehi Jin Ka Jasad

 

Mar Ke Ji Uthna Faqat Azad Mardon Ka Hai Kaam

 Garcha Har Zee Rooh Ki Manzil Hai Aagosh-E-Lehad

 

Qabar (Apne Murde Se)

 Ah Zalim! Tu Jahan Mein Banda’ay Mehkoom Tha

Main Na Samjhi Thi Ke Hai Kyun Khak Meri Souz Naak 

 

 Teri Mayyat Se Meri Tareekiyan Tareek Tar

 Teri Mayyat Se Zameen Ka Parda’ay Namoos Chaak

 

Alhazar, Mehkoom Ki Mayyat Se Sou Bar Alhazar

 Ae Sarafeel ! Ae Khuda’ay Kainat ! Ae Jaan-E-Pak

 

Sada’ay Ghaib

 Garcha Barham Hai Qayamat Se Nizam-E-Hast-O-Bood

Hain Issi Aashob Se Beparda Asrar-E-Wajood

 

 Zalzale Se Koh-O-Dar Urtte Hain Manind-E-Sihab

 Zalzale Se Wadiyon Mein Taza Chashmon Ki Namood

 

Har Nayi Tameer Ko Lazim Hai Takhreeb-E-Tamam

 Hai Issi Mein Mushkilat-E-Zindagani Ki Kushood

 

Zameen

 Ah Ye Marg-E-Dawam, Ah Ye Razm-E-Hayat

 Khatam Bhi Ho Gi Kabhi Kashmakash-E-Kainat ! 

 

Aqal Ko Milti Nahin Apne Button Se Nijaat

 Arif-O-Aami Tamam Band’ay Laat-O-Manaat 

 

  Khuwaar Huwa Kis Qadar Adam-E-Yazdaan Sifaat

 Qalb-O-Nazar Par Garan Aese Jahan Ka Sibaat 

 

 Kyun Nahin Hoti Sehar Hazrat-E-Insan Ki Raat?

 

 

 

 

 

IIS Logo

www.DervishOnline.com

 

 

IQBAL DEMYSTIFIED - ANDROID APP