Menu

Content

Breadcrumb

A+ A A-

آزاد کي رگ سخت ہے مانند رگ سنگ

 

آزاد کي رگ سخت ہے مانند رگ سنگ
محکوم کي رگ نرم ہے مانند رگ تاک
محکوم کا دل مردہ و افسردہ و نوميد
آزاد کا دل زندہ و پرسوز و طرب ناک
آزاد کي دولت دل روشن، نفس گرم
محکوم کا سرمايہ فقط ديدئہ نم ناک
محکوم ہے بيگانہء اخلاص و مروت
ہر چند کہ منطق کي دليلوں ميں ہے چالاک
ممکن نہيں محکوم ہو آزاد کا ہمدوش
وہ بندئہ افلاک ہے، يہ خواجہ افلاک

IIS Logo

www.DervishOnline.com

 

 

IQBAL DEMYSTIFIED - ANDROID APP